Wednesday, September 14, 2005

خدا آرہا ہے!

خدا آرہا ہے۔
God is coming!
اور اپنے ساتھ ڈونٹس لارہا ہے۔

Tuesday, September 06, 2005

اسرائیل

دانیال نے اسرائیل۔پاکستان مزاکرات سے متعلق اردو بلاگرز کے لیے کچھ سوالات کھڑے کیے ہیں۔ ان کے جواب دے رہا ہوں۔

اسرائیل سے بات کیوں نہیں ہونی چاہئیے؟

ہونی چاہیے اور بلاخوف و ججھک ہونی چاہیے۔

* * *
استنبول ملاقات سے پہلے آپ نے کتنی مرتبہ اپنے بلاگ پر فلسطین کے بارے میں کیا کچھ لکھا ہے؟ لنکس فراہم کریں۔

اردو میں افسوس صرف ایک مرتبہ۔ فلسطینی حقِ واپسی کے بارے میں عام پاکستانی خیالات میں مجھے منافقت نظر آتی ہے۔ انگریزی میں پچھلے سال فرائڈے ٹائمز میں ایک مضمون لکھا تھا۔ جو دستیاب نہیں ہے۔ لیکن اس بلاگ پر اس کے چند اقتباسات ہیں۔

* * *
اسرائیل سے مذاکرات نہ کرنے سے پاکستان کو کیا فوائد حاصل ہوسکتے ہیں؟ یا امت مسلمہ کو کیا فوائد حاصل ہوسکتے ہیں یا فلسطینیوں کو کیا فائدے حاصل ہوسکتے ہیں؟

اسرائیل سے مزاکرات نہ کرنے سے پاکستان، امّت یا فلسطینیوں کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ الٹا پاکستان کے دشمنوں کو یہ کہنے کا موقع ملے گا (اور ملتا ہے) کہ یہ لوگ ساتویں صدی سے آگے سوچ ہی نہیں پاتے۔

* * *
آپ ذاتی طور پر کتنے اسرائیلیوں کو جانتے ہیں؟

تین۔ اس کے علاوہ کئی امریکی یہودیوں کو بھی جانتا ہوں، اکثر کو دوست بھی سمجھتا ہوں۔

* * *
اسرائیل اور فلسطین کے تنازعے اور اسرائیلی نقطہ نظر کے بارے میں آپ کیا جانتے ہیں؟

اسرائیل اور فلسطینی تاریخ پر میں نے کئی کتابیں پڑھی ہیں۔ جن میں اسرائیلی اور فلسطینی، دونوں فریقین کے نقطہِ نظر شامل ہیں۔ اس کے علاوہ اخبارات اور رسائل کا مطالع کرنے کی بھی کوشش کرتا ہوں۔